ہنگو میں جنسی درندگی کے بعد قتل کی جانے والی بچی مدیحہ کے قتل کے خلاف اسلامی جمعیت طلبہ کے زیر اہتمام احتجاجی ریلی

ہنگو میں جنسی درندگی کے بعد قتل کی جانے والی بچی مدیحہ کے قتل کے خلاف اسلامی جمعیت طلبہ کے زیر اہتمام احتجاجی ریلی مظاہرین نے بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی میں ملوث افراد کو سر عام پھانسی کا مطالبہ کیا۔ پشاور(کیمپس رپورٹر)ہنگو میں جنسی درندگی کے بعد قتل کی جانے والی بچی مدیحہ کے قتل اور ملک بھر میں بچوں کے ساتھ جنسی بے راہ روی کے بڑھتے ہوئے واقعات کے خلاف اسلامی جمعیت طلبہ جامعہ پشاور کے زیر اہتمام ہاسٹل اے بلاک سے خیبر میڈیکل کالج تک احتجاجی ریلی نکالی گئی جس میں کثیر تعداد میں طلبہ نے شرکت کی۔ریلی کی قیادت اسلامی جمعیت طلبہ جامعہ پشاور کے ناظم عماد نظامی کررہے تھے۔ مظاہرین قاتلوں کو سزاء دو کے نعرے لگا رہے تھے۔اس موقع پر طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے ناظم جمعیت عماد نظامی نے کہا کہ اسلامی ریاست پاکستان میں ہر روز مختلف طریقوں سے انسانیت کاقتل ہوتا ہے۔ہنگو میں چند دنوں پہلے مدیحہ نامی بچی پہلے لاپتہ ہوئی جس کی بعدازاں ایک جنگل سے لاش ملی اور پولیس رپورٹ کے بعد بچی کو جنسی درندگی کے بعد گولی ماری گئی۔اس طرح کے واقعات ہمارے معاشرتی اقدار، ہمارے اخلاقیات اورریاست کے قانون پر ایک سوالیہ نشان ہے۔عماد نظامی نے مزید کہا کہ گذشتہ چند سالوں سے اس طرح کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔رپورٹس کے مطابق سال 2018میں پاکستان میں 3832اس کے واقعات رپورٹ ہوئیں جو کہ سال 2017 کے مقابلے میں بتیس فیصد اضافہ ظاہر کرتا ہے۔2019کے پہلے چھ مہینوں میں 1300 بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے واقعات پیش آئیں جس میں 92ملک کے دارحکومت اسلام آباد میں رپورٹ ہوئیں۔وطن عزیز میں کسی نے اس مسئلہ کے دیر پا حل کے لئے جامع قانون سازی نہیں کی لیکن چند مہینوں پارلیمنٹ میں ملزمان کو سرعام پھانسی دینے کا بل پیش کیا گیا تو کچھ مغربی این جی اوز نواز پارلیمنٹ کے ممبران نے سر عام نھانسی کو وحشیت قرار دے کر اس کی مخالفت کی،ملک کا اشرافیہ اپنے مفادات کے لئے ہر قسم کے اقدامات اٹھانے کے لئے تیار ہے لیکن غریب کے بچوں کے تحفظ کے لئے زخمت گورا نہیں کرتا۔عماد نظامی نے قتل وزیادتی ملوث افراد کو سرعام پھانسی دینے اور اس طرح کے واقعات کی روک تھام کے لئے جامع پالیسی و قانون بنانے کا مطالبہ کیا تاکہ مستقبل میں اس طرح کے واقعات کا سدباب ہوں۔

By | 2020-02-20T16:26:25+00:00 February 20th, 2020|Latest News|0 Comments

Leave A Comment